پشاور: (ویب ڈیسک) ڈیرہ اسماعیل خان میں دہشت گردوں نے پولیس چوکی پر راکٹ لانچرز اور دستی بموں سے حملہ کردیا جبکہ پولیس بروقت جوابی کارروائی سے دہشت گرد پسپا ہو گئے۔

پولیس کے مطابق ڈی آئی خان میں کلاچی پولیس سٹیشن کی چوکی ٹکواڑہ پر دہشت گردوں نے رات گئے راکٹ برسا دئیے، چوکی پر دہشت گردوں کی جانب سے شدید فائرنگ بھی کی گئی، تاہم پولیس کی جانب سے بروقت جوابی ایکشن سے دہشت گرد پسپا ہونے پر مجبور ہو گئے۔

پولیس کے مطابق ڈی پی او محمد شعیب خان نے ڈی ایس پی صدر حافظ عدنان اور سکواڈ کے ساتھ بروقت کارروائی کرتے ہوئے دہشت گردوں کو منہ توڑ جواب دیا جس میں دہشت گردوں کے ہلاک و زخمی ہونے کی اطلاعات ہیں، آپریشن کے دوران چوکی پر موجود اہل کاروں کو ریسکیو کیا اور 4 اہلکاروں کو فوری طور پر ہسپتال منتقل کیا گیا۔

قانون نافذ کرنے والے اداروں کے مطابق ڈی آئی خان کی تاریخ میں دہشت گردوں کا یہ کسی بھی پولیس چوکی پر سب سے بڑا حملہ تھا، جس میں تقریباً 20 دہشت گردوں نے چیک پوسٹ کو تین اطراف سے گھیر کر فائرنگ شروع کردی اور حملے میں پی جی سیون راکٹ اور دستی بموں سمیت جدید ہتھیاروں کا استعمال بھی کیا۔

اطلاعات کے مطابق پولیس کی جانب سے اڑھائی گھنٹے تک جاری رہنے والی کارروائی کے دوران دہشت گرد فرار ہو گئے، ریسکیو آپریشن کے دوران دہشت گرد ہلاک و زخمی بھی ہوئے، جنہیں ان کے ساتھی اپنے ساتھ لے گئے، دہشت گرد چوکی پر قبضہ کر کے بڑی تباہی مچانا چاہتے تھے جسے ناکام بنا دیا گیا۔

واقعے کے بعد کلاچی سمیت ضلع بھر میں سکیورٹی سخت کردی گئی ہے، ڈی پی او ڈیرہ محمد شعیب کا کہنا ہے کہ پولیس کسی بھی قیمت پر دہشت گردوں کے عزائم کامیاب نہیں ہونے دے گی۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے