کابل: (ویب ڈیسک) افغانستان کے صوبے زابل کے تنگ کنویں میں گرنے والا بچہ دوران علاج ہسپتال میں دم توڑ گیا۔ انتقال کے بعد طالبان کے سابق امیر ملا عمر کے بیٹے موجودہ وزیر دفاع ملا یعقوب جذبات پر قابو نہ رکھ سکے اور رو پڑے۔

طالبان حکام کے مطابق صوبے زابل کے کنویں میں3 روز سے پھنسا بچہ دم توڑ گیا ہے، نو سالہ حیدر کو انتہائی مشکل آپریشن کے بعد ریسکیو کیا گیا تھا اور طبی امداد کے لئے کابل کے اسپتال منتقل کیا گیا، جہاں وہ دوران علاج انتقال کرگیا۔

افسوسناک واقعہ تین روز قبل افغان صوبہ زابل کے ضلع جلدک میں پیش آیا تھا جہاں حیدر نامی بچہ تنگ کنویں میں گرگیا تھا، واقعہ رپورٹ ہونے پرافغان وزیر دفاع مولوی یعقوب اور سینیئر طالبان رہنما انس حقانی جائے وقوعہ پر پہنچے اور انہوں نے خود امدادی کاموں کی نگرانی کی تھی۔

افغان میڈیا کے مطابق تنگ کنویں میں گرنے والے بچے حیدر کو سخت جدوجہد کے بعد آکسیجن اور اور غذائی اشیا فراہم کی گئیں تھی۔

صوبائی وزیر ٹیلی کمیونیکیشن زابل بدست عبدالہادی یحییٰ خود کھدائی کرکے راستہ بنانے میں کامیاب ہوئے وہ پانچ میٹر تک رسی سے خود اترے تاہم بورنگ کی تنگی کے باعث آگے نہ جاسکے تھے۔

واقعہ عالمی سطح پر رپورٹ ہوا تھا جس کے باعث خبر کو غیر معمولی حیثیت ملی، تنگ کنویں میں گرنے والے حیدر کی بحفاظت بازیابی کے لئے دعاکی اپیل بھی کی گئی تھی۔

اس دوران طالبان کے بانی امیر ملا عمر کے بیٹے، موجودہ نائب امیر و ملٹری آپریشنز کے سربراہ و عبوری وزیر دفاع ملا یعقوب جذبات پر قابو نہ رکھ سکے اور رو پڑے۔

طالبان کے قطر میں سیاسی دفتر کے ترجمان ڈاکٹر محمد نعیم نے ملایعقوب کے روتے ہوئے جانے کی ویڈیو شیئر کی۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے