فلسطینی حکومت نے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے آج سامنے آنے والے” ڈیل آف دی سینچری” کو جانبدارانہ قراردیتے ہوئے عالمی برادری سے اس کے بائیکاٹ کی اپیل کی ہے۔

خبر کے مطابق، فلسطینی حکومت کا کہنا ہے کہ امریکہ کا امن منصوبہ مشرق وسطیٰ میں جاری فلسطین ۔ اسرائیل تنازعے کا حل نہیں بلکہ یہ منصوبہ اسے مزید گھمبیر بنائے گا۔ ہم عالمی برادری سے پر زور مطالبہ کرتے ہیں کہ وہ امریکہ کے اس جانبدارانہ امن منصوبے کا بائیکاٹ کرے اور فلسطینیوں کا ساتھ دے۔

فلسطینی حکومت کے ترجمان محمد اشتیہ نے رام اللہ میں اعلیٰ سطحی حکومتی اجلاس سے قبل کہا کہ امریکہ کے امن پلان میں مقبوضہ بیت المقدس کو اسرائیل میں شامل کیا گیا ہے۔ امریکہ نے ہمارے خلاف اور فلسطینی پناہ گزینوں کی کفالت کرنے والی اقوام متحدہ کی ایجنسی کے خلاف جنگ شروع کی ہے۔

واشگنٹن میں فلسطین کے دفاتر تک بند کردیے گئے اور فلسطینیوں کے تمام مالیاتی ذرائع بھی بند کرنے کی مذموم کوشش کی جا رہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ فلسطینی قوم متفقہ طورپر امریکہ کے نام نہاد امن منصوبے کومسترد کرچکی ہے۔

ہم عالمی برادری سے پر زور مطالبہ کرتے ہیں کہ وہ اس منصوبے  کے امریکی اعلان کو مسترد کردے۔

محمد اشتیہ کا کہنا تھا کہ امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ اسرائیلی وزیراعظم بن یامین نیتن یاھو کو جیل سے بچانے کی کوشش کررہے ہیں۔

یہ  امن منصوبہ مشرق وسطیٰ میں امن کے لیے نہیں بلکہ ارض فلسطین پر قابض لوگوں کو تحفظ دینے کے لیے تیار کیا گیا ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے