پاکستان میں غریب گھرانوں کی اکثریت مدارس میں تعلیم حاصل کرتی ہے، مدارس میں تعلیم حاصل کرنے کے بعد مختلف بچے اپنی ڈیوٹیاں انجام دیتے ہیں، موجودہ حکومت مدارس کے طالبعلموں کو بھی ٹیکنالوجی کی جدت کی تعلیم دینے کی خواہشمند ہے، تاہم مدرسے کے طالبعلموں کے حوالے سے ایک خبر راولپنڈی کے شہر ٹیکسلا سے آئی ہے، ٹیکسلا یونیورسٹی میں ہونیوالی روبوٹک مقابلہ مدرسے کے طالبعلموں نے جیت لیا۔

ٹیکنالوجی کی ویب سائٹ ٹیک جوس کے مطابق ہائی ٹیک یونیورسٹی آف ٹیکسلا میں تیس دسمبر کو ہونے والے مقابلوں میں جامعہ بیت السلام سمیت 20 یونیورسٹیز کے طلبہ نے شرکت کی۔

مدرسہ جامعہ بیت السلام کے طالب علموں نے روبوٹکس کے مقابلے میں اپنی خداد صلاحیتوں کا لوہا منواتے ہوئے میدان اپنے نام کیا۔

رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ مقابلے میں دیگر 20 جامعات کے طالب علم مدمقابل تھے جنہوں نے اپنے روبوٹ پیش کیے البتہ جامعہ بیت السلام کے طالب علموں کے تیار کردہ روبوٹ کو ججز نے بہترین قرار دیا۔

علاوہ ازیں تقریری مقابلے میں بھی جامعہ بیت السلام کے طالب علموں نے پہلی پوزیشن حاصل کی۔

رپورٹ کے مطابق جامعہ بیت السلام فلاحی ادارے کے ماتحت چل رہا ہے جہاں طالب علموں کو مذہبی تعلیم کے ساتھ جدید سائنسی تعلیم بھی فراہم کی جاتی ہے جبکہ وہاں میٹرک اور او لیولز کی تعلیم کی سہولت بھی موجود ہے جس کا انتخاب طالب علم خود کرتے ہیں۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے