امارت اسلامیہ کے مجاہدین نے الفتح آپریشن کے سلسلے میں کابل، بلخ، غزنی، میدان اور جوزجان صوبوں میں فوجی چوکیوں اور گشتی پارٹیوں کو نشانہ بنایا۔

تفصیل کے مطابق سنیچر کے روز صبح کے وقت کابل شہر کے حلقہ نمبر9 کے مربوطہ یکہ توت کے مقام پر پولیس رینجر گاڑی حکمت عملی کے تحت ہونیوالے دھماکہ سے تباہ اور اس میں سوار 3 اہلکاروں کو ہلاکتوں کا سامنا ہوا۔

رپورٹ کے مطابق جمعہ اور سنیچر کی درمیانی شب صوبہ غزنی کے صدر مقام غزنی شہر کے شہباز کے علاقے میں فوجی چوکی پر ہونے والے حملے میں 3 اہلکار قتل ہوئے اور اسی وقت ضلع دہ یک کے مرکز پر  مجاہدین نے حملہ کیا،جس کے نتیجے میں 3 فوجیوں کی ہلاکت کی اطلاع ملی۔

صوبہ بلخ سے اطلاع ملی ہےکہ سنیچر کےروز صبح کے وقت ضلع چمتال کے مرکز پر حملے میں ایک فوجی ہلاک اور چاراسیا کے مقام پر چوکی پر حملے میں ایک فوجی زخمی ہوا، جب کہ جمعہ اور سنیچر کی درمیانی شب عشاء کے وقت ضلع خاص بلخ کے مرگین تپہ نامی فوجی بیس پر حملے میں 3 اہلکار قتل ہلاک جب کہ 3 زخمی  اور رات گئے بنگلہ کے مقام پر مجاہدین نے پولیس اہلکار کو قتل کردیا۔دریں اثناء ضلع چاربولک کے لبک کے قریب فوجی بیس پر ہونیوالے حملے میں ایک اہلکار ہلاک جب کہ 3 زخمی ہوئے۔

دوسرجانب سنیچر کے روز دوپہر کے وقت صوبہ میدان ضلع سیدآباد کے مملہ کے علاقے میں مجاہدین کے حملے میں 2 فوجی ہلاک ہوئے  اور جمعہ کےروز سہ پہر کے وقت صوبہ جوزجان ضلع فیض آباد کے شاجہان قلعہ کےمقام پر مجاہدین نے ایک جنگجو کو قتل کردیا۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے