پاکستان نے بابری مسجد کے حوالے سے بھارتی سپریم کورٹ کے فیصلے پر گہری تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے  کہ  بھارتی سپریم کورٹ اقلیتوں کے مفادات کا تحفظ کرنے میں ناکام رہی ہے۔

بھارتی سپریم کورٹ نے بابری مسجد کیس کا فیصلہ سناتے ہوئے مسجد کی زمین ہندوؤں کے حوالے کرتے ہوئے وہاں پر مندر تعمیر کرنے کا حکم دیا ہے۔

اس فیصلے پر ردعمل میں ترجمان دفتر خارجہ نے کہا کہ فیصلے سے ایک بار پھر انصاف کا تقاضا پورا نہیں ہوا۔

دفتر خارجہ کا کہنا ہے کہ بھارتی سپریم کورٹ کے فیصلے سے بھارت کے نام نہاد سیکولرازم کا چہرہ بے نقاب ہوگیا اور فیصلے سے ظاہر ہوتا ہے کہ بھارت میں اقلیتیں محفوظ نہیں جب کہ اقلیتوں کو اپنے عقائد اور عبادت گاہوں پر تشویش لاحق ہو گئی ہے۔

ترجمان دفتر خارجہ نے تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا ہے کہ بھارت میں ہندو انتہا پسندانہ سوچ خطے میں امن کے لیے خطرہ ہے اور ہندوتوا نظریہ دیگر اداروں کو متاثر کر رہا ہے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے