بھارت میں ہندو انتہا پسندوں نے گائے کا گوشت بیچنے کے شبے میں ایک اور شخص کو قتل کردیا۔

بھارتی میڈیا کے مطابق ریاست جھاڑکھنڈ کے ایک گاؤں میں 34 سالہ شخص کو مشتعل ہجوم نے گائے کا گوشت بیچنے کے شبے میں تشدد کا نشانہ بنایا جس سے وہ ہلاک ہوگیا جب کہ ہجوم کی جانب سے دیگر دو افراد پر بھی تشدد کیا گیا جس سے وہ زخمی ہوگئے۔

پولیس کا کہناہے کہ گاؤں میں کچھ افراد کی جانب سے ممنوعہ گوشت فروخت کیے جانے کی اطلاعات موصول ہوئی تھیں جس پر مقامی افراد نے انہیں پکڑ کر تشدد کا نشانہ بنایا، واقعے میں ملوث پانچ افراد کو گرفتار کیا جاچکا ہے۔

واضح رہے کہ چند ماہ پہلے ریاست جھاڑکھنڈ میں ہی ہندوانتہا پسنوں نے ایک نوجوان کو ’جے شری رام‘ نعرے لگانے پر مجبور کیا تھا اور نوجوان کے انکار پر اسے تشدد کرکے ہلاک کردیا تھا

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے