امارت اسلامیہ کے مجاہدین نے کابل، غزنی،میدان،کاپیسا، سمنگان اور بلخ صوبوں میں بلیک واٹر آفسر اور سیکورٹی فورسز پر حملہ کیا۔

تفصیلات کے مطابق جمعہ اور سنیچر کی درمیانی شب عشاء کے وقت کابل شہر کے بنی حصار کے علاقے میں مجاہدین نے بلیک واٹر کے اجرتی آفسر شفیق اللہ منگل ولد محب اللہ کو موت کے گھاٹ اتار دیا۔

رپورٹ کے مطابق جمعہ کےروز دوپہر کے وقت صوبہ غزنی کے  صدر مقام غزنی شہر کے کج قلعہ کے علاقے میں بم دھماکہ سے فوجی ٹینک تباہ اور اس میں سوار  اہلکاروں میں سے 2 ہلاک جب کہ 4 زخمی ہوئے۔

دوسری جانب جمعہ کےروز شام کے وقت ضلع قرہ باغ کے کروسائی کے قریب ملوک کے مقام پر مجاہدین کے حملے میں  ایک جنگجو ہلاک جب کہ دوسرا زخمی اور رات کے وقت مذکورہ کے مقام پر چوکی پر حملے کے نتیجے میں 2 اہلکار ہلاک ہوئے۔

صوبہ میدان سے اطلاع ملی ہےکہ جمعہ کےروز ضلع سیدآباد کے شیخ آباد بازار،سلطان خیل،ہفت آسیا اور لوہڑہ کے علاقوں میں فوجی کاروان اور چوکیوں پر ہونے والے حملوں کے دوران ایک ٹینک تباہ ہونے کے علاوہ 5 اہلکار ہلاک جب کہ ایک زخمی ہوا اور رات کے وقت ضلع چک کے آنتن نامی چوکی پر حملے کے نتیجے میں 2 فوجی قتل ہوئے۔

رپورٹ کے مطابق صوبہ کاپیسا ضلع نجرآب کے درہ پٹہ کے علاقے میں مجاہدین نے جنگجوؤں کی چوکی پر جمعہ اور سنیچر کی درمیانی شب حملہ کرکے اللہ تعالی کی نصرت سے اس پر قابض ہوئے اور وہاں تعینات 2 جنگجو ہلاک جب کہ 3 زخمی ہونے کے علاوہ ایک فوجی رینجر گاڑی اور 3 موٹرسائیکلیں تباہ ہوئیں اور مجاہدین نے دو کلاشنکوفیں بھی غنیمت کرلی۔

دریں اثناء صوبہ سمنگان ضلع درہ صوف کے ازبیک پریدہ کے علاقے میں واقع جنگجوؤں کی چوکی پر مجاہدین کے حملے میں 2 جنگجو ہلاک جب کہ ایک زخمی ہوا۔

صوبہ بلخ سے اطلاع ملی ہےکہ جمعہ کےروزضلع شولگرہ کے سیاآب کے علاقے میں فوجی بیس پر حملے میں 2 فوجی ہلاک جب کہ 2 زخمی اور ایک ٹینک بھی تباہ ہوا اور ضلع چمتال کے مرکز کی دفاعی چوکی پر حملے کے نتیجے میں 2 اہلکار ہلاک جب کہ 2 زخمی ہوئے۔

جواب دیں

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے